محنت کرنے والوں نے دولت والوں کو للکارہ ہے

Submitted by Moazzam Kazmi on Fri, 02/08/2008 - 08:50

پاکستان اپنی تمام تاریخ میں آج سب سے زیادہ عدم استحکام اور نہ ختم ہونے والے اور ہر روز پہلے سے زیادہ بڑھتے ہوئے شدید بحرانوں کے گرداب میں بری طرح پھنس چکا ہے جنکی کوئی آخیر اوراختتام نظر نہیں آرہا اور اس صورت حال نے پاکستان کا مستقبل اور عوام کا مقدرمایوسی اور تباہی کی اندھی کھائی میں دھکیل دیا ہے ۔ آٹے، بجلی، گیس، پیٹرول، کھانے والا تیل یا گھی، بے روزگاری، غربت، عذاب ناک مہنگائی، بھوک ، ننگ، بیماری اور سماجی تباہی کا اژدہ پھن پھلائے آج پاکستان کی ہر قدر کو نگل رہا ہے جس کے خلاف اگر آج مذاحمت نہ کی گئی تو پھر شاید اسکا وقت بھی نہ رہے آج مزدور عوام کواپنی طبقاتی صفوں میں اتحاد پیدا کرکے اسے درست کر کے حکمرانوں کے خلاف نا قابل تسخیر بناہے اپنی زندگی کے لیے خود لڑنا سیکھنا ہے عوام کے لیے کوئی اور نہیں لڑے گا بلکہ عوام کو خو د آگے آنا ہے اوراسی مقصد کے پیش نظر کسی کو تو پہلے بلی کے گلے میں گھنٹی بندھنی ہے اور سوکھی پاک سر زمیں پر کسی نے تو پانی کا پہلے قطرہ بنا ہے اور آج پاکستان کی ساٹھ سالہ تاریخ میں پہلی دفعہ بائیں بازو کے مارکسسٹ لیننسٹ اور ٹراٹسکیسٹ مزدور رہنما سوشلزم کا علم بلند کئے سرمایہ داروں ، جاگیر داروں ،سامراجی گماشتہ اورفرقہ وارانہ حکمرانوں کے ظلم کی سیاسی امجگا پارلیمنٹ کا اصلی استحصالی چہرہ بے نقاب کرنے کے لیے اٹھارہ فروری کو الیکشن کے میدان میں عوام دشمن قوتوں کو للکار رہے ہیں کیونکہ اب عوامی جدوجہد کا تقاضہ اور وقت کی اشد ضرورت ہے کہ پاکستان کے لیٹرے حکمرانوں کا مقابلہ انکی اپنی سیاسی ڈرائنگ روم جس کو میرے دوست طارق بلوچ امیروں کا دفتر رشتہ ناطہ بھی کہتے ہیں پارلیمنٹ میں جا کر کیا جائے اور عوامی حقوق اور انکے اذیت ناک مسائل کے خلاف عوامی انقلاب کا جھنڈا بلند کیا جائے تاکہ عوام کو ہر جگہ موجودہ حکمرانوںکا گھیراو کرنے کے لیے متحرک کیا جاسکے مسجد مندر چرچ پارلیمنٹ اور ہر ریاستی ادارے میں ان کے خلاف عوام کی طبقاتی لڑائی کو منظم کرکے انقلاب کی جدوجہد کو آگے بڑھایا جائے ۔ عوام کی اس لڑائی کو عوام کے زریعے عوام کے وسائل سے عوام کے ساتھ ملکر لڑنا اور جیتنا ہے اور سرمایہ کی حکمرانی کی جگہ عوامی حکمرانی کو قائم کرنا ہے اور صرف اسی طریقے سے انقلابی جدوجہد کی جاسکتی ہے اور یہ تین مزدور اور عوامی کامریڈ انہی بنیادوں اور طریقہ کار پر اس الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں۔ ضیا آمریت کی پالتو کراچی میں فاشیسٹ ایم کیو ایم جس نے کراچی حیدر آباد اور سندھ کے محنت کشوں کو مہاجر تعصب کی فرقہ واریت کی خون ریزی میں ڈوبو دیا ہے جس نے عوام کے طبقاتی اتحاد کو اس شاونزم کی بنیاد پر تباہ کر کے ظلم حکمرانوں اور آمریتوں کو مضبوط کیا ہے اور اس ضیائی تحفے کے خلاف آج چنگاری ڈاٹ کم، جریدہ طبقاتی جدوجہد، پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپین، بے روزگار نوجوان تحریک ، یوتھ فار سوشلسٹ انٹر نیشنل اور انٹر نیشنل انگلش ویب سائٹ مارکسسٹ ڈاٹ کم کی حمائت سے ریاض حسین لونڈ بلوچ قومی اسمبلی حلقہ257میں کھڑے ہیں انکا انتخابی نشان تیر ہے اور یہ پاکستان پیپلز پارٹی کے پلیٹ فارم سے الیکشن لڑ رہے ہیں جنکا نعرہ ہے مہنگائی ایک عذاب، بے روزگاری ایک اذ یت، نج کاری ایک جرم، لسانیت ایک وحشت، جاگیر داری ایک لعنت، سرمایہ داری ایک بربریت، سامراجیت ایک درندگی، ۔ وزیر ستان میں جہاں آج پاکستان کی ریاست اپنی ہی سیاست سے دست گریبان ہو کر قبائل کی بربادی کر رہی ہے یہاں نہ صرف پاکستان کی ریاست ناکام ہے بلکہ اسلامی بنیاد پرستی بھی نا مراد ہے جو اپنی اپنی مفاد پرستی کی جنگ میں بے گناہ انسانوں کے خون کی ھولی کھیل رہے ہیں یہاں جنگ نہیں بلکہ امن کی ضرورت ہے جو خوشحالی تعمیر وترقی اور سوشلسٹ انقلاب سے ہی ممکن ہوگااور اسکی آواز علی وزیر ایڈووکیٹ بنے ہیں جنکا قومی اسمبلی حلقہ41ہے اور انتخابی نشان ٹاچ ہے انکا نعرہ ہے۔ روٹی، امن، روز گار ، تعلیم ، علاج اور خوشحالی۔ قصورشہر بابائے بولے شاہ کی نگر میں چمڑے یا ٹینڈریز کے سرمایہ داروں اور یہاں کے جاگیر داروں کے خلاف پہلے بھی یہاں سے ممبر قومی اسمبلی تھے اور اس بار پھر الیکشن میں کھڑے ہوئے ہیںجو پاکستا ن پیپلز پارٹی کے ترنگے یا تین رنگ کے جھنڈے تلے جن کا انتخابی نشان تیر ہے جو آج بانگے دہل یہ نعرہ لگا رہے ہیں کہ میرا ماضی پھر میری گوئی۔ مزدوروں کسانوںاور نوجوانوں کی امنگوں کا انقلابی ترجمان منظور احمدقومی اسمبلی حلقہ139قصور ۔ یہ پاکستان ٹریڈ یونین ڈیفنس کمپین کے صدر بھی ہیں اور سابقہ جریدہ طبقاتی جدوجہد کے ایڈیٹراور پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما ہیںچنگاری ڈاٹ کم ان تین سوشلسٹوں کی انتخابات میں مکمل سپورٹ کرتی ہے جنکا بنیادی اور مرکزی نعرہ ہے کہ ہم محنت کرنے والوں نے تم دولت والوں کو للکارہ ہے۔ آپ بھی ان کے حلقوں میں انکی الیکشن مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں یہ عوام کی عوامی آواز اور مزدور کی انقلابی جدوجہدکی پہچان ہیں۔اس کے علاوہ انکی تمام انتخابی مہم مزدور اور محنت کش عوام خود اپنے وسائل سے چلا رہے ہیںآپ بھی اس عوامی الیکشن میں ان کی مالی مدد کریں کیونکہ یہ انقلابی کوئی سرمایہ دار جاگیر دار یا ان کے ایجنٹ نہیں ہیں بلکہ ان کے خلاف صف آرا ہیں جس سے انکی کوئی دولت مند حمائت نہیں کر رہا بلکہ یہ تمام تو ان کے خلاف ہیں سرگرم ہیں ان عوام کے ساتھیوں کی جیت کا دارومدار صرف اور صرف عوام ہی ہیں اور کوئی نہیںاور اگر یہ جیت سکتے ہیں تو صرف اور صرف آپ کی سیاسی اور معاشی حمائت سے۔ انکی جیت عوام اور مزدور کی جیت ہوگئی ۔آئیں آگے بڑھیں جدوجہد کے لیے اپنی زندگی اور اپنی جیت کے لیے ۔ عوام زندہ باد، مزدور زندہ باد، انقلاب زندہ باد۔۔

Add new comment

CAPTCHA
This question is for testing whether or not you are a human visitor and to prevent automated spam submissions.
Copyright (©) 2007-2019 Urdu Articles. All rights reserved.
Developed By Solaxim Web Hosting and Development Services
Affiliates: Urdu Books | Urdu Poetry | Shahzad Qais | Urdu Jokes One Urdu| Popular Searches | XML Sitemap Partners: UrduKit | Urdu Public Library

Urdu Articles Is One Of The Largest Collection Of Urdu Articles On Different Topics. You can read articles on topics like parenting, relationship, politics, How to do Things, Shopping Reviews, Life Style, Cooking, Health and Fitness, Islam and Spirituality... You can also submit your articles to get free publicity and fame on your published work. Keep Smiling......