تاریخ کا قتل

Submitted by arifmahi on Sat, 02/23/2008 - 17:46

کرد قوم جو کہ صلاح الدین ایوبی کی قوم ہے یہ عراق ،شام ،ترکی ، ایران تک پھیلے ہوئے ہیں اس قوم کی تاریخی حیثیت یہ ہے کہ اس میں بڑے بڑے بزرگ بھی گزرے ہیں تاہم صلیبی جنگوں میں اس قوم نے مسلمانوں کے لئے بڑے تاریخی کارنامے سر انجام دئے ہیں ایک وقت ایسا بھی آیا جب مسلمانوں کی مرکزی سلطنت منگولوں نے تباہ کر دی تھی اور مسلمانوں کا صرف ایک ہی علاقہ مصر بچا تھا اور ساری اسلامی سلطنت کی منگولوں نے دھجیاں اڑا دیں اور منگول فاتح خرمستی کے عالم میں مسلمانوں کے آخری ٹھکانے مصر کو فتح کرنے کے درپے ہوئے تو کرد اور بربری حبشی ، مسلمانوں کی ڈھال بنے کیونکہ مصری سپہ سالار بیبرس کو اس بات کا بخوبی اندازہ تھا کہ یہ جنگجو ہی منگولوں سے نبرد آزما ہو سکتے ہیں اور یہ بات اس وقت مصر کے مسلم حکمران امیر قطز کو بھی معلوم تھی کہ کرد اور بربری ہی ان وحشی منگولوں کے ساتھ پنجہ آزمائی کر سکتے ہیں

اس بات کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے سپہ سالار بیرس نے سوڈان سے بربری اور تباہ حال علاقے شام اور عراق سے کردوں کو بھرتی کیا اور جب عین جالوت کا معرکہ ہوا تو تاریخ گواہ ہے کہ عرب و عجم مل کر منگولوں سے برسرپیکار ہوئے ارو یہی کرد تھے جنہوں نے جانبازی کے ایسے کارنامے سر انجام دئیے کہ منگولوں کو عبرتناک شکست سے دوچار کیا

کردوں کی تاریخ جنگی اور اسلام کے لئے عظیم کارناموں سے بھری پڑی ہے یہی وجہ تھی کہ جب دنیا پر برطانوں راج قائم ہوا تو حکومت برطانیہ نے کردوں کو خصوصی طور پر نشانہ ستم بنایا اور کردوں کو مختلف علاقوں میں تقسیم کر دیا اور ان کو دنیا کے نقشے سے ہمیشہ کے لئے غائب کردینے کے لئے بہت سے اقدامات کئے

آج بھی ان کا وسیع تر حصہ عراق میں اور کچھ حصہ ایران ، شام اور ایک بڑا حصہ ترکی میں رہتا ہے کچھ عرصے قبل عبداللہ اوجلان نے کردوں کی آزادی کی تحریک کو منظم کر کے دوبارہ مسلح جدوجہد شروع کر دی جس کے سبب کردوں نے گویلا کاروائیاں شروع کر دیں تاکہ آزاد کردستان کے قیام کو ممکن بنایا جا سکے تا ہم ترکی جس کے وسیع حصے پر کرد رہتے ہیں نے اس تحریک کو کچلنے کے لئے بڑے پیمانے پر کام شروع کردیا اور اسرائیل کی مدد سے اٹلی کے ایک علاقے سے عبداللہ اوجلان کو گرفتار کر لیا تاکہ کردستان کی تحریک کو لیڈرشپ سے محروم کیا جا سکے اوراس میں بڑی حد تک کامیاب بھی رہا تا ہم عراق پر امریکی حملے کے نتیجے میں کردستان ورکر پارٹی نے امریکہ کی مدد کی اور اس کے لیڈر جلال طالبانی جو عراق کے صدر بھی ہیں نے درپردہ کردستان کی آزادی کے ایجنڈے پر کام جاری رکھا لیکن ترکی کے حکام کسی بھی صورت میں کردستان کے گوریلوں کو روکنے کی منصوبہ بندی کئے ہوئے تھے جس کی بناء پر ترکی گاہے بگاہے کردوں کے مشتبہ ٹھکانوں پر حملے کرتا رہتا ہے یہ جدوجہد یا آزادی کی جنگ کب تک جاری رہے گی اس کا فیصلہ آنیوالے وقت کرے گا

This is an Urdu article written by Arif Qureshi about Kurd rebels of Turkey and tells who are Kurds and what is the role of Kurdish people for Islam.

Sirf Turk hi Kurdon ko sahih tor par apney jhandey taley jama kar saktey hain aur Iran aur Iraq ko apney tamam Kurd Ilaqey unkey hawaley karney hongey. Nasal ki bunyad par kurdon ki lar'ayi nahin ho sakti balkey Turkon ko apney Islam key tamam manafi qawaneen khatm karney honge jiskey ba'd hi Kurd unkey saath muttahid ho saktey hain.
Kurdon ki Turkon key khilaf nasli imtiaz ki waja se agar lar'ai ho rahi hey to yeh durust nahin hey, kuchh Kurdon ko maanna par'ey ga aur kuchh Turkon ko apney nizam aur rawayyey mein tabdeeliyan laani par'eyn gi.

Add new comment

CAPTCHA
This question is for testing whether or not you are a human visitor and to prevent automated spam submissions.
Copyright (©) 2007-2019 Urdu Articles. All rights reserved.
Developed By Solaxim Web Hosting and Development Services
Affiliates: Urdu Books | Urdu Poetry | Shahzad Qais | Urdu Jokes One Urdu| Popular Searches | XML Sitemap Partners: UrduKit | Urdu Public Library

Urdu Articles Is One Of The Largest Collection Of Urdu Articles On Different Topics. You can read articles on topics like parenting, relationship, politics, How to do Things, Shopping Reviews, Life Style, Cooking, Health and Fitness, Islam and Spirituality... You can also submit your articles to get free publicity and fame on your published work. Keep Smiling......