JOWA AIK NAY ANDAZ MEIN

Submitted by news123 on Fri, 08/27/2010 - 15:58

وطن عزیز پاکستان میں آج کل موبائل فون کپنیاں اپنے مفاد کیلئےجوے کوایک نئی شکل میں آم کر رھی ھیں۔ یوتا کچھ یوں ہے کہ کسی مخصوص نمبر پر مسج کرنے سے بیلنس میں سے ایک مخصوص رقم کاٹ لی جاتی ھے اس دعوے کے ساتھ کہ آپ لکی ڈرا میں شامل ہو رہے ھیں اس طرح لاکھوں لوگ اس چکر میں آجاتے ھیں اول تو کبھی کسی کا انعام نکلتا نہیں محض کسی شخص کو معمولی سی رقم دے کہ کسی ٹی وی اشتہار میں دکھا دیا جاتا ھے کہ جی فلاں شہر کہ ان صاحب کا لکی ڈرا میں اتنا انعام نکلا ھے فرض کریں اس جوے میں کسی ایک شخص کہ نام کوئی رقم نکلتی بھی ہے تو بھی وہ کل جمع ہونے والی رقم کا ایک یا دو فیصد سے زیادہ نہیں ھوتی باقی رقم خود کمپنی بہادر ہڑپ کر جاتی ہے۔ جوے کی اس شکل میں جیتنے کا امکان 000000000000.1 فیصد سے بھی کم ہوتا ہے یعنی نا ہونے کے برابر لیکن ایک چیز اس جوابازی میں شامل ھونے والے ھر شخص کو ضرور ملتی ھے اور وہ ہے گناہ عظیم:ہ
قرآن کریم میں سورہ مائدہ میں جوے اور شراب کو ایک ساتھ زکر کرکے اسے گندگی اور غلاظت قرار دیا گیا ھے۔ اور جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے چوسر (جو سٹہ و جوے میں کھیلا جاتا ھے) کے بارے میں فرمایا: جس نے چوسر کھیلا گویا کہ اس نے اپنا ہاتھ خنزیر کے گوشت اور اس کے خون میں سان لیا۔
دیکھئے جوے کھیلنے کو جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے کس قدر گناؤنے عمل سے مشابہ قرار دیا ھے جس کے کرنےکا کوئی مسلمان تصور بھی نہیں کر سکتا۔۔
دیکھا جائے تو یہ جوے کی ہدترین قسم ھے کیونکہ اس جوے بازی میں ھر عمر و طبقے کے مرد و زن شامل ھیں اور انہیں یہ احساس بھی نہیں ھوتا کہ وہ اللہ اور حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی نا فرمانی کا ارتکاب کر رہے ھیں اس لئے انہیں توبہ کی توفیق بھی نہیں ھوتی۔

افسوس بہت سے لوگوں کو اس بات کا پتہ ہی نہیں ہے کہ اس طرح کہ ڈرا اور لاٹریاں بھی جوا ھیں اس لئے ھر مسلمانوں کا یہ دینی فرض ھے کہ وہ دوسرے مسلمانوں تک یہ بات پہچائیں۔ چاہے زبانی کلامی ہو یا انٹرنیٹ یا پھر ایس ایم ایس کے ذریعہ ھو۔۔ پاکستانی قانون میں بھی جوا قانونی طور پر جرم ھے اس لئے حکومت کا بھی یہ فرض بنتا ھے کہ وہ اس قسم کے ڈرا اور لاٹریوں پر پابندی لگائے کر اپنی ذمہ داری پوری کرے ۔ ۔
((((((((( www.PakBooks.tk ))))))))))))

Add new comment

Filtered HTML

  • Allowed HTML tags: <a href hreflang> <em> <strong> <cite> <blockquote cite> <code> <ul type> <ol start type='1 A I'> <li> <dl> <dt> <dd> <h2 id='jump-*'> <h3 id> <h4 id> <h5 id> <h6 id>
  • Lines and paragraphs break automatically.
  • Web page addresses and email addresses turn into links automatically.
Copyright (©) 2007-2018 Urdu Articles. All rights reserved.
Developed By Solaxim Web Hosting and Development Services
Affiliates: Urdu Books | Urdu Poetry | Shahzad Qais | Urdu Jokes One Urdu| Popular Searches | XML Sitemap Partners: UrduKit | Urdu Public Library

Urdu Articles Is One Of The Largest Collection Of Urdu Articles On Different Topics. You can read articles on topics like parenting, relationship, politics, How to do Things, Shopping Reviews, Life Style, Cooking, Health and Fitness, Islam and Spirituality... You can also submit your articles to get free publicity and fame on your published work. Keep Smiling......