Insaaf Kaun Kare ga

Submitted by nisar_mughal on Fri, 03/11/2011 - 17:52

انصاف کون کرے گا
کافی عرصہ گزرا کچھ سوچوں نے ذھن میں گھر کر رکھا ہے کے آج کی پاکستانی ماییں محمّد بن قا سم جیسے بیٹوں کو جنم کیوں نہیں دیتی جو ایک لڑکی کی پکار پر جنگ کرنے نکلا. آج کا پاکستانی یہ کیوں نہیں سوچتا کے آج بہی ہزاروں ما ییں، بہنیں اور بیٹیاں اس لڑکی سے کہی زیادہ ظلم و ستم کا شکار ہیں. کوئی اس گوجرانوالہ والی بچی کا کیوں نہیں سوچتا جو بچپن میں جنسی تشدد کر کے موت کے گھاٹ اتار دی گئی.اس عورت کے گھر والوں کو انصاف کون دلوایے گا، جس کا میاں ایک امریکن شہری ریمنڈ ڈیوس کی گولی کا شکار بنا، اور اس نے انصاف مانگنے سے بہتر سمجا کے خود کو مار دے. اس کا اعتماد منصفوں کے فیصلوں سے کس نے اٹھایا. منصف اعلی کو انصاف حاصل کرنے کے لیے کس نے شہر شہر، بستی بستی ،نگر نگر پھرنے پر مجبور کیا.ان فوجیوں کے خون کا حساب کون دے گا جن کو اپنے ہی لوگوں کو فتح کرنے کے لیے بیجھا گیا اور سوات،وانا اور وزرستان کے ان بچوں کے خون کا حساب کون دے گا جواپریشن کے دوران شہید ھوے
میں کس کے ہاتھ میں اپنا لہو تلاش کروں
تمام شہر نے پہنے ھوے ہیں دستانے

.ملک کے خزانے کون خالی کر گیا. کاش کے کوئی اس ماں کا درد جان سکتا جس کا بیٹا لا پتا ہے، کاش کے کوئی اس پولیس والے کی بیٹی کے جذبات کو محسوس کر سکتا جو آج بھی اس انتظار میں ہے کے اس کا باپ اس کے لیے چوڑیاں لے کر گھر آے گا لیکن اس معصوم کو کیا معلوم کے اس کا باپ کو کسی اور کے گناھوں کی سزا ملی اور وو شہید ھو گیا.ان سب باتوں کا ذمہ دار کون ہے میں،آپ یا کوئی اور. نہیں نہیں یہ کوئی اور نہیں یہ ہم سب ہیں. ھم سب نے مل کر اپنی تقدیر ان لوگوں کے ہاتھ میں جو ہمارے ساتھ یہ سب کر گزرے. وہ وڈیرے جو پاکستان بننے سے پہلے انگریزوں کی نوکریاں کرتے تھے اور ان کو خوش رکھنے کے لیے کچھ بھی کر گذرتے تھے پاکستان بننے کے بعد ہمارے آقا بنے. وھی تو ہیں جو یہ سب مظالم ڈھا رہے ہیں لیکن ذمدار ہم ہیں کے ھم نے ان کو نہ کبی روکا اور نہ کبھی برا سمجھا بلکہ ان کو ووٹ دے کر کامیاب بناتے رہے اور سب سے بڑی بد قسمتی یہ ہے کے ان کے خلاف اگر کسی نے کچھ بولا تو اس کو بیوقوف کہتے رہے. لیکن وقت گزرا حالات نے کروٹ بدلی. غریب نا انصافی، مہنگائی' ظلم و بربریت کے بوجھ تلے دب گیا. امیروں نے فیکٹریاں کھولی لیکن غریب پھر بھی بے روزگار رہا کیوں کے امیر کی فکٹریاں وطن عزیز میں نہیں بلکہ کسی اور ملک میں کھل گئیں. وطن عزیز کے خزانے تو خالی ھو گے اور حکمران امیر سے امیر تر ھوے مگر نہ تو ہمارے بنکوں میں پیسا جمع ھوا اور نہ ہی کوئی نیا بنک کھلا.آج چودہ برس سے زیادہ عرصہ گزر گیا کے قوم کے ایک بیٹےنے ان وڈیروں کے خلاف آواز اٹھائی اور انصاف کی ایک تحریک چلائی، اس نے عافیہ صدیقی کو انصاف ،چیف جسٹس کی بحالی،عدلیہ کی آزادی کی بات کی. آج میں یہ محسوس کرتا ہوں کے قوم کو اس کی باتیں سمجھ آنے لگی ہیں اور انشا الله وہ دن دور نہیں جب عوام اس کی قیادت میں انقلاب کے راستے پر نکلے گی.قوم کے اس بیٹے نے ملک و قوم کے لیے وہ کیا جو باقی لوگ حکومت میں رہتے ھوے بھی نہ کر سکے. نمل کالج کا قیام، شوکت خانم ہسپتال کا قیام،عمران خان فاو نڈیشن کا قیام.زلزلے اور سیلاب کے دوران غریبوں کی امداد.قوم کے اس بیٹے کا نام عمران خان ہے اور میرا یہ یقین ہے جس طرح اس نے ٩٢ کے عالمی کرکٹ کپ میں قوم کر سر فخر سے بلند کیا تھا اسی طرح وہ قوم کے باقی مسائل حل کرنے میں بھی پیش پیش ہو گا اور اس قوم کر سر کبھی جکنے نہیں دے گا. آ یں سب مل کر اس کا ساتھ دیں اور آنے والی نسلوں کا مستبل تباہ ہونے سے بچا لیں. کہتے ہیں مومن دو بار ایک بل سے نہیں ڈسا جا سکتا لیکن ہم کیسے مومن ہیں جو ایک ہی بل سے ٦٣ برس سے دسے جا رہے ہیں. آ ییں یہ عہد کریں کے اب ہم اسی بل سے دوبارہ نہیں دسے جائیں گے

جب پرچم جان لے کر نکلے ہم خاک نشین مقتل مقتل
اس وقت سے لے کر آج تلک جلاد پے ہیبت طاری ہے

Guest (not verified)

Mon, 05/02/2011 - 16:51

The topics close to this topic are proposed by the custom writing service thus, the students would like to buy custom essay papers or term paper just about that.

Add new comment

Filtered HTML

  • Allowed HTML tags: <a href hreflang> <em> <strong> <cite> <blockquote cite> <code> <ul type> <ol start type='1 A I'> <li> <dl> <dt> <dd> <h2 id='jump-*'> <h3 id> <h4 id> <h5 id> <h6 id>
  • Lines and paragraphs break automatically.
  • Web page addresses and email addresses turn into links automatically.
Copyright (©) 2007-2018 Urdu Articles. All rights reserved.
Developed By Solaxim Web Hosting and Development Services
Affiliates: Urdu Books | Urdu Poetry | Shahzad Qais | Urdu Jokes One Urdu| Popular Searches | XML Sitemap Partners: UrduKit | Urdu Public Library

Urdu Articles Is One Of The Largest Collection Of Urdu Articles On Different Topics. You can read articles on topics like parenting, relationship, politics, How to do Things, Shopping Reviews, Life Style, Cooking, Health and Fitness, Islam and Spirituality... You can also submit your articles to get free publicity and fame on your published work. Keep Smiling......