سیاسی شیخ چلی

Submitted by siaksa on Sun, 03/07/2010 - 21:02

ھمارے ملک میں کچھ سیاسی شیخ چلی ایسے بھی ھیں جو کہ بلا سوچے سمجے ایسے بیان دیتے ھیں جس اس بات کو تقویت ملتی ھے کہ شیخ چلی کا کردار فرضی نھیں تھا واقعی ایسے کردار ھمارے معاشرے کا حصہ ھیں۔ ایک ایسے ھی شیخ چلی شاھی سید صاحب بھی ھیں جن کی باتوں کا نہ تو سر پیر ھوتا ھے نہ عقل اس کو تسلیم کرتی ھے۔ جناب ناسمج صاحب کبھی دس ھزار پختونوں کی فوج بنانے کی بات کرتے ھیں جس پر ھمارے مقتدر حلقوں کو تشویش ھونا چاھیے کہ پاکستان کا اییین اس بات کی اجازت نھیں دیتا کہ اس قسم کی ذاتی فوج بنای جاے اور کس کے لیے، اس کے کیا مقاصد ھونگے اور اس کے اخراجات کون پورے کرے گا۔ ایک سوال ھے جناب موصوف کی پارٹی کے اعلی ذمہ دران کو ضرور بازپرس کرنی چاھیے۔ اج بھر انکی شیخ چلی طبعت نے ایک اور شوشا ڈال دیا کہ بلدیاتی الیکشن میں کوی سرپرایز دینا چاھتے ھیں وہ بھی کراچی میں۔ ارے میدان لگنے والا ھے بجاے بڑکیں مارنے کے کچھ تو عملی طور پر کرکے بھی دیکھانا بھی پڑتا ھے ،بس اپ یہ کر لو کہ نفرت بھلانے کی سیاست نہ کرو اتنا ھی احسان کافی ھوگا پاکستانی قوم پر۔ کراچی میں کوی کسی سے نفرت نھیں کرتا یہ تو محبتوں کا شھر ھے۔ رھی ترقیاتی کام نہ نظر انے کی شکایت اس کا علاج انکھوں کا ڈاکٹر ھی بھتر طور پر کرسکتا ھے۔ محبتوں کو ٌپھلاو اور متحدہ قومی موومنٹ سے سبق لے لو اج وہ ھی واحد پارٹی ھی پاکستان میں نظر ارھی ھے جو عملا پاکستانی قوم کو متحد کرنے کی بات کررھی ھے۔ ایک دفعہ پھر 23 مارچ ارھی ھے جس میں ھمارے بزرگوں نے ایک ریزولیشن پاس کی تھی یعنی ایک وعدہ کیا تھا خود سے وہ وعدہ زیادہ اولین ھے اور پاکستانی قوم پر قرض ھے اپنے بزرگوں کا اور شھیدوں کہ اس کو وفا کریں، نہ ذاتی مفاد کے حامل مثیاق جمھیوریت جن کی ھمارے ان بزرگوں کے وعدوں اگے کوی حثیت نھیں جن کو ھم بھول بھیٹے ھیں اور کچھ سیاسی شیخ چلی نفرتوں کے بیج بورھے ھیں اور قوم کو گمراہ کرنے کا گھنوانا فعل کررھے ھیں۔ ھم سب کو پاکستانی بن کر متحد ھونا ھوگا۔ ھمارہ متحد ھونا ھی ھمارے پاکستان کی تکمیل کرے گا۔<?xml:namespace prefix = o ns = "urn:schemas-microsoft-com:office:office" />

Add new comment

Filtered HTML

  • Allowed HTML tags: <a href hreflang> <em> <strong> <cite> <blockquote cite> <code> <ul type> <ol start type='1 A I'> <li> <dl> <dt> <dd> <h2 id='jump-*'> <h3 id> <h4 id> <h5 id> <h6 id>
  • Lines and paragraphs break automatically.
  • Web page addresses and email addresses turn into links automatically.