ایک سیاسی جماعت کا قتل

Submitted by arifmahi on Sat, 02/23/2008 - 15:45

اس آرٹیکل میں میں نے پاکستان کے اندر ہونیوالے عام انتخابات میں عوام کے کردار اور سیاست میں ایک جماعت کی موت پر اپنا نکتہ ء نظر پیش کیا ہے

پاکستان کے عام انتحابات برائے 2008بخیر خوبی ہو چکے ہیں اور پاکستان میں ہونیوالے عام انتخابات اس وجہ سے تاریخی اہمیت کے حامل ہیں کہ اس میں پاکستان کے عوام نے پاکستان کے صدر جنرل پرویز مشرف کی حامی جماعت مسلم لیگ (ق) کو شکست دی ہے اور حیران کن نتائج کے مطابق نتیجہ کچھ اس طرح سے بنا ہے۔
پاکستان پیپلز پارٹی 80 سیٹیں
مسلم لیگ (ن) 70 سیٹیں
مسلم لیگ (ق) 38 سیٹیں
متحدہ قومی موومنٹ 19 سیٹیں

اب تادم تحریر پاکستان پیپلز پارٹی بڑی جماعت کی حیثیت سے ابھر کر سامنے آئی ہے اور مسلم لیگ (ن) دوسری بڑی جماعت کی حیثیت سے سامنے آئی ہے

پاکستان کے صدر جناب پرویز مشرف کی حمایت یافتہ جماعت مسلم لیگ(ق) کو یہ سکست کیوں نصیب ہوئی اس پر طائرانہ نظر ڈالنے سے معلوم ہوتا ہے کہ پاکستان کے صدر نے جماعت کو مضبوط بنیادوں پر استوار نہیں ہونے دیا مزید یہ کہ جماعت کے مرکزی لیڈر اگر کسی موقع پر کوئی کردار ادا کرنے کی کوشش کرتے تو اس کی ہمییشہ بیخ کنی کی جاتی تھی جس کی مثال لال مسجد ، اکبر بگٹی کی موت ، قبائلی علاقوں میں آپریشن جس کو امریکی حمایت حاصل تھی ، عدلیہ کی تذلیل جس میں عدلیہ کو برطرف کر کے ان کے ججوں کو نظر بند کر دینا شامل ہے

ملک میں بلا جواز ایمرجنسی ،ڈاکٹر عبدالقدیر خان کی گرفتاری ، میڈیا پر خوامخواہ کی قدغن ، خوفناک مہنگائی ، ملک میں ہونیوالے فسادات ، بلوچستان کا آپریشن شامل ہیں جن کی وجہ سے عوام مشرف کی حکومت سے بیزار ہو چکے تھے اور انہوں نے واضح طور پر مسلم لیگ (ق) کی حکومت اور مشرف کے خلاف فیصلہ دے دیا یہی وجہ تھی کہ جس کی بناء پر پاکستان مسلم لیگ (ق) کو عبرت ناک شکست ملی اور اب وہ شکست و ریخت کا شکار ہو کر ماضی کا قصئہ پارنیہ بن رہی ہے۔

This is an Urdu article about election 2008 in Pakistan and failure of Muslim league (Q) by Arif Qureshi. "The Murdar of Party"

Add new comment

Filtered HTML

  • Allowed HTML tags: <a href hreflang> <em> <strong> <cite> <blockquote cite> <code> <ul type> <ol start type='1 A I'> <li> <dl> <dt> <dd> <h2 id='jump-*'> <h3 id> <h4 id> <h5 id> <h6 id>
  • Lines and paragraphs break automatically.
  • Web page addresses and email addresses turn into links automatically.