امید پر ھی دنیا قایم ھے

siaksa's picture

الھی یہ کیا ماجرہ ھے کہ اج پاکستانی قوم روزانہ کسی نہ کسی المیہ سے نبزازمہ ھوری ھے۔ کبھی طیارے کے حادثے میں ۱۵۰ سے زیادہ انسان لقمہ اجل بن جاتے ھیں۔ کبھی سیلاب سے انسان اپنی جان اور مال سے ھاتھ دوبھٹتے ھیں۔ کراچی میں انسان انسان کا دشمن بن بھیٹا ھے۔ اس پر یہ ستم اور کہ اسلام اور جھاد کے نام پر نوجوانوں کو گمراھ کرکے انسانوں کی بلی چڑھای جارھی ھے۔ اس کے اوپر دشمن کے عزایم بے حد خطرناک ھیں۔ ناجانے کن کن حیلے بھانوں سے پاکستان کی خود مختاری اور سالمیت کو ختم کرنے کی کوششوں میں سرکردہ ھے۔ پاکستانی عوام ایسے گرداب کا شکار ھوچلی ھے جھاں اسے عزت سے دو روٹی کمانے اور اپنی عزت نفس کو بچانے کے بھی لالے پڑگیے ھیں۔ ان سب صورت حال میں نہ کوی ایسی سبیل یا راستہ پاکستانی کی عوام کو نظر نھیں ارھا جو پاکستان اور اس کی عوام کو اس مشکل گھڑی سے نکالے۔ معاشی بدحالی، امن امان، ناگھانی افات سے بچاو، دشمنوں کی چالوں کا موثر جواب ایک ایسا تنگ ھوتا ھوا گھیرہ پاکستان کی عوام کو اپنے شکنجے میں کستا جارھا ھے اور تمام راستے ختم ھوتے نظر ارھے ھیں۔ لیکن مایوسی کے اس ماحول میں بھی ایک راستہ ایسا بھی ھے جس کی طرف پاکستان کی عوام کو دیکھنا ھوگا کیونکہ رسول برحق نے فرمایا کہ مایوسی کفر ھے۔ ھماری پریشانیوں کا حل صرف اور صرف ھمارے پاس ھے اور وہ یہ ھے کہ تمام پاکستانی قوم اللہ کے حضور توبہ کی طلب گار ھو۔ اج پاکستان کی عوام پر جو مشکلات اور پریشانیاں ھیں اس سے بچا اسی صورت میں جاسکتا ھے کہ تمام قوم اجتماعی توبہ کرکے اللہ کریم سے مدد کی طلب گار ھو۔ صدر مملکت اور حکومت وقت اس صورت حال پر تمام قوم کو اکھٹا کریں ۔ دنیاوی طور پر مفاھمت کی پالیسی پر عمل کرکے حکومتی اتحاد کو برقرار رکھنے سے زیادہ اھم اور اولین ذمہ داری یہ ھے کہ اللہ کریم کو راضی کیا جاے۔ اج اللہ ھم سے ناراض ھے۔ اللہ کی نشانیوں کو سمجھو۔ یہ سب جو ھورھا ھے اس بات کی علامت ھے کہ اللہ ھم سے ناراض ھے۔ صدر مملکت اور وزیر اعظم صاحب سے گذارش ھے کہ پورے پاکستان کے علما حضرات، سیاسی اور مذھبی جماعتوں کو جمع کرکے اللہ کو راضی کرنے کی پالیسی پر عمل کرنے پر راغب کیا جاے۔ اللہ جو نھایت رحیم اور کریم ھے، ھم صرف اللہ ھی کی مدد سے اس مشکل وقت سے نکل سکتے ھیں۔ اور اجتماعی توبہ اور دعا ھی ھماری مشکلوں اور پریشانیوں کو حل کرسکتی ھے جب اللہ اپنی بارگاہ میں اٹھے ھوے ھاتھوں کی برکت سے پانی بر سا دیتا ھے تو اس بات میں کو شک شبھے کی کوی گنجایش نھیں ھونی چاھیے کہ وہ توبہ اور دعا کے لیے اٹھے ھوے ھاتھوں کو مشکلوں سے نہ نکا لے۔ وہ ضرور پاکستانی عوام پر رحم کرے گا اور سب کو ان مشکلات سے نکالے گا۔ کاش یہ پیغام پاکستان کے حکمرانوں، علما حضرات اور سیاسی میدانوں کے سپاہ سلاروںتک پھنچ جاے اور وہ میری اس کوشش کو عملی جامہ پھنادیں۔ کوشش اس امید کے ساتھ کی ھے کہ امید پر ھی دنیا قایم ھے اور اس دنیا کو قایم دایم رکھنی والی ذات اللہ رب عزت کی ھے جو جس کو چاھے عزت دے اور ذلت دے۔ اور ایک مسلمان ھونے کے ناتے ھم کو عزت اور بلند مرتبے کی خاطر اپنی اپنی انا کو مارکر اس کے اگے توبہ اور مدد کا طلب گار ھونا چاھیے۔

Share this
No votes yet