اسامہ بن لادن کی ہلاکت

Submitted by Khwaja Ekram on Sun, 05/08/2011 - 04:59

آج کا دن عالمی تاریخ میں ایک اہم دن کے طور پر یاد کیاجائے گا کیونکہ 11 ستمبر 2001 میں امریکہ کے شہر نیو یارک پر ٹریڈ سینٹر پر حملے کے بعد سے ہی اسامہ بن لادن کی امریکہ کو تلاش تھی ۔ ماناجاتا ہے کہ اس حٕملے کا ماسٹر مائنڈ اسامہ ہی تھا۔ اسی لیے اس وقت سے آج تک اسامہ اور القاعدہ کو دہشت گردی کا سب سے بڑا نیٹ ورک مانا گیا ۔اور آخر کار 2 مئی کو امریکی ایجنسیوں کی کاروائی میں اسامہ کا ہلاک کر دیا گیا ۔اس اعتبار سے یہ دن دہشت گردی کی تاریخ میں ایک سنگ میل کی حیثیت سے جانا جائے گا۔اسامہ کی ہلاکت سے پوری دنیا میں خوشی کی ایک لہر دوڑ گئی ہے اور اسے دہشت گردی کی شکست کے روپ میں دیکھا جا رہا ہے ۔ امریکی صدر براک اوبامہ نے جب اسامہ کی موت کا اعلان کیا اس وقت سے دنیا کے تمام چینلوں میں یہی خبر باز گشت کے طور پر گونج رہی ہے ۔امریکی صدر براک اوباما نے کہا کہ وہ امریکی عوام اور دنیا کو بتانا چاہتے ہیں کہ اسامہ بن لادن کو امریکی اہلکاروں نے پاکستان کے شمال مغربی شہر ایبٹ آباد میں اتوار کی شب ایک آپریشن میں ہلاک کر دیا۔
اس آپریشن کو دنیا کے کامیاب ترین آپریشن میں سے ایک مانا جارہاہے ۔ لیکن دنیا اس بات پر متحیر بھی ہے کہ پاکستان کی سرزمین اسامہ کی موجودگی کی خبر امریکی ایجنسیوں نے پاکستان کو نہیں دی اور نہ اس آپریشن میں اس کی مدد لی بلکہ حکومت پاکستان کی جانب سے اب تک جو بیان آیا ہے اس سے یہی معلوم ہو رہا ہے پاکستان کو خبر کیے بغیر اورا س کی اجازت لیے بغیر یہ کاروائی کی گئی ۔ یہ اپنے آپ میں کئی سوالات کو جنم دے رہا ہے ۔ ایک تو یہ کیا امریکی ایجنسیوں کو پاکستا ن پرت بھروسہ نہیں تھا؟ یا پاکستان کو معلوم تھا مگر اپنے یہاں خلفشار کی وجہ سے لاعلمی کا اظہار کیا جا رہاہے ۔ دوسر ابڑا سوال یہ بھی ہے کہ جب اسامہ کو گھیر لیا گیا تھا تو اسے مارنے کی کیا ضرورت تھی؟ کیا امریکہ کو اسامہ کے مزید راز جاننے میں کوئی دلچسپی نہیں تھی؟ یہ وہ سولات ہیں جو کچھ ہی دنوں میں ابھر کر سامنے آئیں گی۔
‘پاکستان کےوزیر اعظم یوسف رضا نے کہا ہے کہ اسامہ بن لادن کی ہلاکت تاریخی کامیابی ہے۔وزیر اعظم نے کہا کہ اپنے ملک کی سرزمین دہشت گردوں کو استعمال نہیں کرنے دیں گے۔ اسامہ بن لادن کی ہلاکت پر مبارک باد دیتے ہوئے انہو ں نے کہا کہ کہ اسامہ بن لادن کی ہلاکت بڑی فتح ہے۔’دنیا کے تمام حکمرانوں کی جانب سے بیانات اور تاثرات آرہے ہیں۔ہر جانب سے خوشیوں کا مژدہ بھی سنایا جا رہا ہے ۔ لیکن یہ لڑائی ابھی یہیں ختم نہیں ہوئی کیونکہ ایک اسامہ کے مرنے سے دہشت گردی ختم نہیں ہوئی بلکہ اس پر سنجیدگی اور خلوص سے کام کرنے کی ضرورت ہے ۔

Guest (not verified)

Tue, 05/10/2011 - 05:02

One acknowledges that humen's life seems to be not very cheap, however some people require money for various stuff and not every man gets enough money. Hence to get good home loans and term loan will be a right solution.

اسامہ اور القائدہ لازم ملزوم تھے، اس کے جانے سے القائدہ کی ریڑہ کی ہڈی ٹوٹ گئی اور اس کا خاتمہ یقینی ہو گیا۔ یہ کیسا جہاد ہے کہ اسامہ میدان جنگ سے دور ایبٹ ٓباد کے ایک پر تعیش بنگلے مین چھپا بیٹھا تھا۔مزید براں قتل و غارت گری کرنے والوں کی زندگی لمبی نہیں ہوتی اور ان کی موت اسی طرح واقع ہوتی ہے۔
پاکستان ایک ایسا ملک جس میں بدقسمتی اور مصائب پہلے ہی زائد از ضرورت ہین،ہم اس نام نہاد مجاہداسلام اسامہ بن لادن اور اس کی عنایات سے ہم محفوظ ہی رہتے تو اچھا تھا۔ جب تک وہ زندہ تھا تو ہمارے لیے ایک درد ِ سر تھا ، اُس کی موت کسی طوفان سے کم نہ ہے۔اسامہ نے ہمیں زندگی میں بھی نقصان پہنچایا تھا اور اُس کے موت پر آج ہم احمقوں کی طرح اپنا سا منہ لیے کھڑے ہیں۔
الظواہری اور طالبان جنہوں نے ذاتی جاہ و اقتدار ، حسد ،مخاصمت اور پیسے کے لالچ مین اسامہ کی مخبری کر دی۔اپنے آپ کو پاک صاف ظاہر کرنے کے لئے طالبان اب ڈرامہ بازی کر رہے ہین۔

Add new comment

Filtered HTML

  • Allowed HTML tags: <a href hreflang> <em> <strong> <cite> <blockquote cite> <code> <ul type> <ol start type='1 A I'> <li> <dl> <dt> <dd> <h2 id='jump-*'> <h3 id> <h4 id> <h5 id> <h6 id>
  • Lines and paragraphs break automatically.
  • Web page addresses and email addresses turn into links automatically.
Copyright (©) 2007-2018 Urdu Articles. All rights reserved.
Developed By Solaxim Web Hosting and Development Services
Affiliates: Urdu Books | Urdu Poetry | Shahzad Qais | Urdu Jokes One Urdu| Popular Searches | XML Sitemap Partners: UrduKit | Urdu Public Library

Urdu Articles Is One Of The Largest Collection Of Urdu Articles On Different Topics. You can read articles on topics like parenting, relationship, politics, How to do Things, Shopping Reviews, Life Style, Cooking, Health and Fitness, Islam and Spirituality... You can also submit your articles to get free publicity and fame on your published work. Keep Smiling......